Posted by: Bagewafa | نومبر 14, 2011

تنہا چاند -پروِین شاکِر

تنہا چاند -پروِین شاکِر

 

 

پُورا دُکھ اَور آدھا چاند

ہِجْر کی شب اَور اَیسا چاند

 

کِس مقتل سے گُزرا ہوگا

اَیساسہما-سہما چاند

 

یادوں کی آباد گلی میں

گھُوم رہا ہَے تنہا چاند

 

میرے مُنہ کو کِس حیرت سے

دیکھ رہا ہَے بھولا چاند

 

اِتنے گھنے بادل کے پِیچھے

کِتنا تنہا ہوگا چاند

 

اِتنے روشن چیہرے پر بھی

سُورج کا ہَے سایہ چاند

 

جب پانی میں چیہرا دیکھا

تُونے کِسکو سوچا چاند

 

برگد کی ایک شاکھ ہٹاکر

جانے کِسکو جھانکا چاند

 

رات کے شانے پر سر رکھے

دیکھ رہا ہَے سپنا چاند

 

سہرا سہرا بھٹک رہا ہَے

اپنے عشْق میں سچّا چاند

 

رات کے شاید ایک بجے ہَیں

سوتا ہوگا میرا چاند


زمرے

%d bloggers like this: