Posted by: Bagewafa | نومبر 26, 2011

کچھ کم ہے—شہریار

کچھ کم ہے—شہریار

 

زندگی جیسی توقع تھی نہیں کچھ کم ہے

ہر گھڑی ہوتا ہے احساس کہیں کچھ کم ہے

 

گھر کی تعمیر تصور ہی میں ہوسکتی ہے

اپنے نقشے کے مطابق یہ زمیں کچھ کم ہے

 

بچھڑے لوگوں سے ملاقات کبھی پھر ہوگی

دل میں امید تو باقی ہے یقیں کچھ کم ہے

 

اب جدھر دیکھئے  لگتا ہے کہ اس دنیا میں
کہیں کوئی چیز زیادہ ہے کہیں کچھ کم ہے

 

Advertisements

زمرے

%d bloggers like this: